وفاقی بجٹ:تنخواہ دار و غیر تنخواہ دار طبقے کیلئے ٹیکس شرح میں مزیداضافہ،تفصیلات منظر عام پر آگئیں

اسلام آباد(آن لائن)حکومت نے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں انکم ٹیکس کی شرح میں اضافے اور نئی سلیبز متعارف کروانے کی تجویز دی ہے۔وزیرمملکت برائے ریونیو حماد اظہر نے اپنی بجٹ تقریر بتایا کہ فنانس ایکٹ 2018 میں کم سیکم قابل ٹیکس آمدن کی حد 12لاکھ روپے مقرر کی گئی تھی جس سے محصولات کی مد میں 80ارب کا نقصان ہوا۔انہوں نے کہا کہ تنخواہ دار افراد کے لیے قابل ٹیکس آمدن کی کم سے کم حد 6لاکھ روپے کرنے اور غیرتنخواہ دار طبقے کیلیے

قابل ٹیکس آمدن کی کم سے کم حد 4لاکھ روپے کرنے کی تجویز پیش کی۔انہوں نے بتایا کہ 6لاکھ روپیسے زائد آمدن والے تنخواہ دار کے لیے 5 سے 35 فیصد کے11 سلیبز متعارف کرانے اور غیر تنخواہ دار 4 لاکھ روپے سے زائد آمدن کے لیے 5 سے 35 فیصد ٹیکس کے8 سلیبز متعارف کرانے کی تجویز ہے۔انہوں نے بتایا کہ نان فائلر کے لییجائیداد کی خریداری پر پابندی ختم کرنے کی تجویز ہے جس کے بعد نان فائلر 50 لاکھ روپے سے زائد کی جائیداد خرید سکیں گے۔

وفاقی بجٹ:تنخواہ دار و غیر تنخواہ دار طبقے کیلئے ٹیکس شرح میں مزیداضافہ،تفصیلات منظر عام پر آگئیں

Source

Leave a Comment

Pin It on Pinterest

Shares
Share This