قرض

قرض

مہر ہونٹوں پہ

سماعت پہ بٹھا لیں پہرے

اور آنکھوں کو

کسی آہنی تابوت میں رکھ دیں

کہ ہمیں

زندگی کرنے کی قیمت بھی چکانی ہے یہاں

Leave a Comment

Pin It on Pinterest

Shares
Share This