غیروں پہ کرم اپنوں پہ ستم

غیروں پہ کرم اپنوں پہ ستم

غیروں پہ کرم اپنوں پہ ستم

اے جان وفا یہ ظلم نہ کر

رہنے دے ابھی تھوڑا سا بھرم

اے جان وفا یہ ظلم نہ کر

ہم چاہنے والے ہیں تیرے

یوں ہم کو جلانا ٹھیک نہیں

محفل میں تماشا بن جائیں

اس طرح بلانا ٹھیک نہیں

مر جائیں گے ہم مٹ جائیں گے ہم

اے جان وفا یہ ظلم نہ کر

ہم بھی تھے ترے منظور نظر

دل چاہے تو اب انکار نہ کر

سو تیر چلا سینے پہ مگر

بیگانوں سے مل کے وار نہ کر

تجھ کو تری بے دردی کی قسم

اے جان وفا یہ ظلم نہ کر

Leave a Comment

Pin It on Pinterest

Shares
Share This