نینوں پہ بس نہ چلے

نینوں پہ بس نہ چلے

نینوں پہ بس نہ چلے

گھونگھٹ میں گوری جلے

گوری کو بھائے نہ دن کا اجالا

پلکیں پروئیں ستاروں کی مالا

سونا رہے اس کے من کا شوالا

جب تک نہ سورج ڈھلے

گھونگھٹ میں گوری جلے

دل نے سنی آج دل کی کہانی

ناچیں امنگیں تو گائے جوانی

بیٹھی ہے چپ چاپ سجریا پہ رانی

ہاتھوں پہ مہندی ملے

گھونگھٹ میں گوری جلے

البیلے نندیا سے دامن بچانا

انگڑائی لے کے سجریا پہ جانا

دھیرے سے گوری کا گھونگھٹ اٹھانا

تاروں کی چھیاں تلے

گھونگھٹ میں گوری جلے

Leave a Comment

Pin It on Pinterest

Shares
Share This